उर्दू खबर (اردو خبر) 

مسلمان عورت سے کی گئی مارپیٹ، نکالا حجاب

برطانیہ میں اسلامی شدت پسندوں کی طرف سے بنایا دہشت گردانہ حملے کے بعد ہو رہی نسلی نفرت سے منسلک جرائم: نفرت کرائم: کے واقعات کے درمیان لندن میں اس طرح کی ایک اور واردات سامنے آئی ہے. یہاں ایک مسلمان عورت کا مبینہ طور پر حجاب تیار گیا اور اس کے ساتھ مارپیٹ کی گئی. بی بی سی کے مطابق گزشتہ 16 جولائی کو بیکر سٹریٹ علاقے میں انيسو عبدالقادر ٹیوب: ریلوے سروس: کا انتظار کر رہی تھی اسی دوران ایک شخص نے اسے چھدرت اور اس کے ایک دوست کو دھکا دے کر دیوار کی طرف گرا دیا. اس سے پہلے اس نے اس مسلمان عورت کا حجاب نکالا.
خاتون نے ٹٹويٹ کیا، ” بےكر سٹریٹ سٹیشن پر اس شخص نے میرا حجاب ھیںچو کی کوشش کی اور جب میں نے اپنا حجاب بہت مضبوطی سے پکڑ لیا جو اس نے مجھے چھدرت. ” انيسو نے یہ بھی کہا کہ موقع پر موجود ایک خاتون نے بھی مسلم عورت کے ساتھ دروويوهار کیا اور برا بھلا کہے. برطانوی ٹرانسپورٹ پولیس کے ایک ترجمان نے کہا کہ اس معاملے کی نسلی نفرت سے منسلک جرائم کے طور پر تحقیقات کی جا رہی هےپروكتا نے کہا، ” اس طرح کے رویے مکمل طور پر ناقابل قبول ہے اور اسے برداشت نہیں کیا جائے گا. اس واقعہ کے بارے میں ہمیں پتہ چلا ہے اور اس کی جانچ کی جا رہی ہے. ” بہر حال، ٹوويٹ میں جس شخص کی تصویر پوسٹ کی گئی اس نے خود کو بے قصور قرار دیتے ہوئے کہا کہ وہ اپنے ایک ساتھی کا ‘نسلی حملے’ سے بچاؤ کر رہا تھا.

سوجي جمہوریت

Related News

Leave a Comment