उर्दू खबर (اردو خبر) 

15 اگست منانے لیکن قومی نہ سرائی: مسلم مذہب جمعرات

اتر پردیش کی حکومت کے مدارس میں یوم آزادی منانے اور قومی گانے کے حکم کے بعد مسلم مذہبی رہنماؤں نے مسلم کمیونٹی کے لوگوں سے قومی نہ گانے، نغمے اور ویڈیوز سے بچے کے لئے اپیل کی ہے. انہوں نے کہا ہے کہ ایسا کرنا اسلام کے خلاف ہے. اگرچہ علماء نے اس دن کو ملک لگن کے دن کے دن کے طور پر منانے کے لئے کہا ہے.

View image on Twitter View image on Twitter View image on Twitter
بریلی شہر قاضی مولانا اسجد خان نے ہفتہ کو ٹائمز آف انڈیا کو بتایا، ‘رودرناتھ ٹیگور نے قومی برطانوی بادشاہ جارج پچن کی تعریف میں لکھا تھا. اسلام کے مطابق ہمارا ‘کپتان’ اللہ ہے کنگ جارج نہیں. ہم قومی کی توہین نہیں کرتے لیکن اپنی مذہبی جذبات کے چلتے اسے نہیں گا سکتے. یہاں تک کہ راجستھان کے گورنر کلیان سنگھ نے بھی قومی پر اعتراض ظاہر کی تھی. ‘

جولائی 2015 میں سنگھ نے راجستھان یونیورسٹی کے 26 ویں کانووکیشن کے دوران کہا تھا کہ ٹیگور نے قومی میں ‘کپتان جے اے’ لکھ کر انگریزی حکمران کی تعریف کی تھی. انہوں نے مشورہ دیا تھا کہ اسے ‘جن گن من منگل گائے’ سے بدل دینا چاہئے.

خان نے کہا، ‘شریعت کے مطابق فوٹو گرافی اور ويڈيوگرپھي بھی غیر اسلامی ہے. وہ ہمیں مدرسے میں شریعت قانون کی نافرمانی کرنے کو کہہ رہے ہیں. ‘ انہوں نے مدارس کے منتظمین کو کہا کہ ہے کہ وہ قومی پرچم پھهراے اور سارے جہاں سے اچھا ہندوستان سرائی، مٹھائیاں باٹے اور آزادی ء میں اپنی جان قربان کرنے والے سےنانيو کو یاد کریں. پیلی بھیت کے شہر مفتی مولانا جرتب رضا خان چاہتے ہیں کہ وزیر اعلی یوگی آدتیہ ناتھ اس صورت میں مداخلت کر اس آرڈر کو منسوخ کریں. انہوں نے کہا، ‘اگر ایسا نہیں ہوتا ہے تو مسلمانوں کے پاس اس کی نظر انداز کرنے کے علاوہ اور دوسرا راستہ نہیں بچے گا.’

بتا دیں یوگی حکومت نے 15 اگست کے دن ریاست کے تمام مدارس میں قومی نغمے، ترنگا لہرانے اور ان سمیت دوسرے ثقافتی پروگراموں کی ویڈیوگرافی کرنے کا حکم دیا ہے. اس سلسلے میں اترپردیش مدرسہ بورڈ کی جانب سے 3 اگست کو اضلاع کے اقلیتی حکام کو بھیجے خط میں یوم آزادی پر ان پروگراموں کی ٹائم ٹیبل بھی طے کی گئی ہے.

Related News

Leave a Comment